Mohsin Naqvi Sad Poetry In Urdu (2022)

Dear viewers, Here you read Mohsin Naqvi’s sad poetry. He was a famous Pakistani poet best known for his ghazals and poetry. Mohsin Naqvi’s full name is Syed Ghulam Abbas Naqvi. Mohsin Naqvi is our favorite poet. He wrote so much poetry regarding sadness and against the ruler of the world, those who don’t care about the poor people.

Mohsin Naqvi’s Poetry tends to be so relaxing and so soothing to the heart, which is inexpressible in words. He died in Lahore in 1996 at the age of 48 years. Here you enjoy the best collection of Mohsin Naqvi poetry in Urdu. He is a Popular poet who has written on every aspect of life. I hope you like it.

Mohsin Naqvi Sad Poetry 

Mohsin Naqvi is a well-known poet in the Urdu culture. He was a great poet and earned a great name in Urdu poetry. Here is the written famous poetry by Mohsin Naqvi. Scroll down and enjoy our poetry. We have got plenty of Mohsin Naqvi sad poetry here at touchingpoetry.com so you can enjoy it.

Sad Poetry Mohsin Naqvi

حیران ہوں کہ مدت قلیل میں محسن”
“وہ شخص میری سوچ سے زیادہ بدل گیا

Heran Hon Ke Muddat Qaleel Mein Mohsin
Woh Shakhs Meri Soch Se Ziyada Badal Gaya

میرے ہاتھوں کی لکیروں میں یہ عیب ہے محسن”
“میں جس شخص کو چھو لوں وہ میرا نہیں رہتا

Mere Hathon Ki Lakiron Mein Yeh Aib Hai Mohsin
Mein Jis Shakhs Ko Chhoo Lon Woh Mera Nahi Rehta

وہ اجنبی بن کے اب ملے بھی تو کیا ہے محسن”
“یہ ناز کم ہے کہ میں بھی اس کا کبھی رہا ہوں

Woh Ajnabi Ban Ke Ab Miley Bhi To Kya Hai Mohsin
Yeh Naz Kam Hai Ke Mein Bhi Is Ka Kabhi Raha Hon

اسے پانا اسے کھونا اسی کے ہجر میں رونا”
“یہی گر عشق ہے محسنؔ تو ہم تنہا ہی اچھے ہیں

Usse Pana Usse Khona Usi Ke Hijar Ma Rona
Yeahi Gar Ishq Hai Mohsin Tu Hum Tanha Hi Ache Hain

ہر موڑ پہ مل جاتے ہیں ہمدرد ہزاروں”
“محسن تیری بستی میں اداکار بہت ہیں

Har Mourr Pay Mil Jatay Hain Hamdard Hazaron
Mohsin Teri Bastii Mein Adakar Bohat Hain

بڑی بے چین رہتی ہے طبیعت اب میری محسنؔ”
“مجھے اب قتل ہونا ہے مگر قاتل نہیں ملتا

Bari Bechain Rehti Hai Tabiyat Ab Meri Mohsin
Mughe Ab Katal Hona Hai Magar Katil Nahi Milta

وہ شخص تو نے جسے چھوڑنے میں جلدی کی”
“تیرے مزاج کے سائے میں ڈھل بھی سکتا تھا

Woh Shaks Tu Na Jese Chorne Ma Jaldi Ki
Tere Mazaj Ke Shaye Ma Dhul Bhe Sakta Tha

Mohsin Naqvi Sad Poetry 2 Lines

Now you can read the famous two lines of Urdu sad poetry by Mohsin Naqvi in Urdu text. You can copy-paste your favorite sad poetry lines for WhatsApp as status.

Mohsin Naqvi sad poetry 2 lines

عمر اتنی تو عطا کر میرے فن کو خالق”
“میرا دشمن میرے مرنے کی خبر کو ترسے

Umer Itni Toh Atta Kar Mere Fan Ko Khaliq
Mera Dushman Mere Marne Ki Khabar Ko Tarse

وفا کی کون سی منزل پے اِس نے چھوڑا تھا
كے وہ تو یاد ہمیں بھول کر بھی آتا ہے

Wafa Ki Kon Si Manzil Pay Is Ne Chorra Tha
Ke Woh To Yaad Hamein Bhool Kar Bhi Aata Hai

کچھ حادثوں سے گر گئے محسن زمین پر”
“ہم رشک آسمان تھے ابھی کل کی بات ہے

Kuch Hadso Se Gir Gaye Mohsin Zameen Par
Hum Rashk Aasman Thay Abhi Kal Ki Baat Hai

بچھڑ کے مجھ سے کبھی تو نے یہ بھی سوچا ہے”
“ادھورا چاند بھی کتنا اداس لگتا ہے

Bhichar Ke Mujh Se Kabhi To Ne Yeh Bhi Socha Hai
Adhoora Chaand Bhi Kitna Udaas Lagta Hai

اس کے میرے فاصلے محسن نہ پوچھ”
“رنگ سے خوشبو جدا ہے اور بس

Is Ke Mere Faaslay Mohsin Nah Pooch
Rang Se Khushbu Judda Hai Aur Bas

ذکرشبِ فراق سے وحشت اسے بھی تھی”
“میری طرح کسی سے محبت اسے بھی تھی

Zikre Shabe Faraaq Se Wehshat Usay Bhi Thi
Meri Terhan Kisi Se Mohabbat Usay Bhi Thi

محسن ہمیں یہ سوچ کے کرنی پڑی پہل”
“شاید وہ شخص آج بھی قید انا میں ہو

Mohsin Humein Yeh Soch Ke Karni Pari Pahil
Shayad Woh Shakhs Aaj Bhi Qaid-e-Aana Mein Ho

بھلے لگتے ہیں طوفان سے لڑتے بادل مجھکو”
“ہوا کے رخ پہ چلتی کشتیاں اچھی نہیں لگتیں

Bhalay lagty hain toofan se larte badal mujhko
Hawa k rukh pe chalti kashtiyan achi nahi lagtin

Mohsin Naqvi Sad Ghazals

Today I’m going to share the most famous and outstanding poetry or ghazals. If you want to read Mirza Ghalib’s sad poetry you can visit our website.

Mohsin Naqvi sad ghazal

دھوپ چھاؤں میں کدورت کیوں ہے؟
سایا انساں کی ضرورت کیوں ہے؟
آنکھوں آنکھوں میں کشش کیسی ہے
چهره چهرہ تیری صورت کیوں ہے؟
روز کیا تازہ جنازے کا جلوس
روز اک غم کا مہورت کیوں ہے؟
جس نے کل مجھ کو گنوایا محسن
آج اسے میری ضرورت کیوں ہے؟

ہجوم شہر سے ہٹ کر، حدود شہر کے بعد
وہ مسکرا کے ملے بھی تو کون دیکھتا ہے
جس آنکھ میں کوئی چہرہ نہ کوئی عکس طلب
وہ آنکھ جل کے بجھے بھی تو کون دیکھتا ہے
ہجوم درد میں کیا مسکرایئے کہ یہاں
خزاں میں پھول کھلے بھی تو کون دیکھتا ہے
ملے بغیر جو مجھ سے بچھڑ گیا محسن
وہ راستے میں رکے بھی تو کون دیکھتا ہے؟

میں نفرتوں کے جہاں میں رہ کر، جدا کروں گا تو کیا کروں گا
یہ ٹھیک کہتے ہو بیوفا ہوں، وفا کروں گا تو کیا کروں گا
بس ایک تو ہی تو رہ گیا ہے، جہاں سارا تو کھو چکا ہوں
تجھے بھی اپنی انا میں آ کر، خفا کروں گا تو کیا کروں گا
ہزار سجدے تو کر چکا ہوں قضا تمہاری محبت میں
میں اب دکھاوے کا کوئی سجدہ ادا کروں گا تو کیا کروں گا
بغیر پانی بھی کوئی مچھلی، بھلا کبھی رہ سکی ہے میر
میں تجھ کو کھو کر، کسی کا ہو کر، بتا کروں گا تو کیا کروں گا

Mohsin Naqvi Sad Poetry In Urdu SMS

With the Amazing collection of Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry SMS, Urdu may express their feelings. You can easily share Mohsin Naqvi’s sad Images and text from poetry with your partner, friends, family, sisters, brothers, relatives, and coworkers by downloading them.

Mohsin Naqvi sad Poetry in Urdu

اب تو آنکھوں میں فقط ڈھول ہے کچھ یادوں کی”
“ہم اسے یاد بھی آۓ ہیں تو کب یاد آۓ

Ab To Aankhon Mein Faqat Dhol Hai Kuch Yaado Ki
Hum Usay Yaad Bhi Aye Hain To Kab Yaad Aye

دکھ ہی ایسا تھا کے “محسن” ہوا گم سم ورنہ
غم چھپا کر اسے ہنستے ہوئے اکثر دیکھا

Dukh hi aisa tha k “Mohsin” hoa gum sum warna
Gham chupa ker usay hanstay hue aksar daikha

اچھا ہوا جلد ہی بدل گئے ہو تم
ور نہ میری امید میں اور بھی گہری ہو جاتی

Acha Hoa Jald Hi Badal Gaye Ho Tum
War Nah Meri Umeed Mein Aur Bhi Gehri Ho Jati

اداس تھا اس قدر کے سویا نہیں رات بھر
پلکوں سے لکھ رہا تھا تیرا نام چاند پر

Udaas Tha Is Qader Ke Soya Nahi Raat Bhar
Palkon Se Likh Raha Tha Tera Naam Chaand Par

بچھڑ تو دوستی کے اثاثے بھی بٹ گئے”
“شہرت وہ لے گئے مجھے رسوئی دے گیا

Bechar Tu Dosti Ke Asase Bhe Batt Gaye
Shuhrat Woh Le Gaye Mughe Ruswai De Gaya

آج کی رات بھی ممکن ہے نا سو سکوں محسن
یاد پِھر آئی ہے نیندوں کو اڑانے والی

Aj ki raat bi mumkin hai na soo sakon mohsin
Yad phir ayi hai neendon ko urane wali

چل پڑا ہوں میں زمانے كے اصولوں پہ محسن
میں اب اپنی ہی باتوں سے مکر جاتا ہوں

Chal Para Hun Mein Zamane Ke Asolon Pe Mohsin
Mein Ab Apni Hi Baton Se Mukar Jata Hun

Conclusion

Thank you for visiting this post. Friends, I hope you like Mohsin Naqvi’s sad poetry. If you have any questions or suggestions in your mind, then you must write to us in the comment box.

Leave a Comment